نماز میں دل لگانے کا طریقہ

نماز میں دل لگانے کا طریقہ سوال: میں نماز میں سورتیں بھی بڑی پڑھتی ہوں اور ظاہری سکون بھی ہوتا ہے ۔ مگر میرا دل ودماغ کتنی باتوں میں گھیرا ہوتا ہے ۔ میں اس وجہ سے بہت پریشان ہوں میں ایسا کیا کروں جو دل کے دھیان سے نماز پڑھوں ؟ جواب: آپ سے اگر ہوسکے تو تہجد کی نماز میں اللہ تعالیٰ سے دعا کریں اگرکسی وجہ سے تہجد میں اٹھنا مشکل ہو تو دن میں مکروہ اوقات کے علاوہ دورکعت نماز پڑھ کر اللہ تعالیٰ سے دعا مانگیں اس اردو کے نیچے وییڈیو میں دیکھیں اور دوسرے لوگوں کے ساتھ شیئر بھی کریں جزاک

iFram

نماز میں دل لگانے کا طریقہ سوال: میں نماز میں سورتیں بھی بڑی پڑھتی ہوں اور ظاہری سکون بھی ہوتا ہے ۔ مگر میرا دل ودماغ کتنی باتوں میں گھیرا ہوتا ہے ۔ میں اس وجہ سے بہت پریشان ہوں میں ایسا کیا کروں جو دل کے دھیان سے نماز پڑھوں ؟ جواب: آپ سے اگر ہوسکے تو تہجد کی نماز میں اللہ تعالیٰ سے دعا کریں اگر کسی وجہ سے تہجد میں اٹھنا مشکل ہو تو دن میں مکروہ اوقات کے علاوہ دورکعت نماز پڑھ کر اللہ تعالیٰ سے دعا مانگیں ۔ جیسا کہ اللہ تعالیٰ نے خود فرمایا :قَالَ رَبُّكُمُ ادْعُونِي أَسْتَجِبْ لَكُمْ ترجمہ : تم مجھ سے مانگو میں قبول کرونگا ۔ ( سورۃ المؤمن یارہ فمن اظلم) جیسا کہ بہشتی زیورمیں ہے : ” عبادت کی قدر کرنے والا ہے دعا کا قبول کر نے والا ہے ” ( بہشتی زیور :1/26) جیسا کہ بہشتی زیور میں ہے کہ : ” جب کوئی مصیبت آئے تو یہ دعا پڑھا کرو ۔ یاحی یا قیوم برحمتک استغیث ۔” ( بہشتی زیور حصہ 5/8) اللہ تعالیٰ کا شکر ادا کریں کہ باقی اعضاء کو عبادت کی توفیق ملی اور استغفار پڑھیں ۔ ” اگر کوئی مصیبت میں ہے تو اس میں بھی بندے کا فائدہ ہے تو وہ بھی نعمت ہے ” ( بہشتی زیور :20/7) شیطان کی پوری کوشش ہوتی ہے کہ انسان نماز نہ پڑھے اگر انسان نماز پڑھ بھی لیتا ہے تو سستی دلاتا ہے اور آخری داؤ یہ چلاتا ہے کہ نماز میں دلجمعی نہ ہونے دے اور وسوسے ڈالتا ہے ۔جن سے بچنے کے لیےچند دعائیں درج ہیں 1۔ ھو الاول والاخر والظاھر والباطن وھو بکل شئی علیم ۔2۔لا حول ولا قوۃ الا بااللہ 3تعوذ پڑھنا ۔ بری چیزوں بری محفلوں ، فضول وبیکار کتابوں سے گریز کریں ( انعام المعبود/ 676) جیسا کہ بہشتی زیور میں ہے : “اللہ اکبر کہہ کر جب کھڑی ہو تو یہ لفظ پر اب یوں سوچو کہ میں اب “سبحانک اللھم ” پڑھ رہی ہوں پھر سوچو کہ اب ” وبحمدک ” کہہ رہی ہوں غرض ساری نماز میں یہی طریقہ رکھو انشاء اللہ اس طرح کرنے سے نماز میں کسی طرف دھیان نہ بٹے گا۔ پھر تھوڑے دنوں میں آسانی سے جی لگنے لگے گا اور نماز میں مزہ آنے لگے گا ۔” ( بہشتی زیور 8/22)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*